161

انڈس واٹر ویز۔۔پاکستان میں سی پیک سے بڑا منصوبہ ثابت ہو سکتا ہے

پاکستان میں Cpec سے بڑا اور فائدہ مند پراجیکٹ اگر کوئی ہوسکتا ہے وہ Inland waterways کا منصوبہ ہے. دنیا کے بہت سے ممالک میں یہ کامیاب ہوچکا ہے اور ہمارے پڑوس میں ہندوستان اور بنگلہ دیش اس پر کافی تیزی سے کام کر رہے ہیں.

پنجاب حکومت نے چند سال قبل پائلٹ پراجیکٹ کے طور پر اٹک سے دؤاد خیل تک 200 کلومیٹر کا منصوبہ شروع کیا تھا لیکن یہ منصوبہ اس سے کہیں بڑا ہوسکتا ہے. کراچی سے افغانستان چلنے والے ایک ٹرک 4000 امریکی ڈالر میں پڑتا ہے. جو inland waterways transportation کے ذریعے 20 ٹائم کم پڑے گا. افغانستان کے علاوہ سنٹرل ایشیا، روس اور چائنا بھی سے اس سے کافی مستفید ہونگے.

پاکستان کو جہاں سستی ٹرانسپورٹ پڑے گی وہیں اسکو بےشمار فائدے ہونگے. مثلاً : دریار کے قریب بےشمار خوبصورت شہر آباد کئے جاسکتے ہیں. (زرا تصور تو کریں کتنا دلکش منظر ہوگا) وہاں ہوٹل اور بےشمار tourism کے لیے پوائنٹس بنا سکتے ہیں. اس سے نئے شہر آباد ہونگے اور بڑے شہروں کی طرف لوگوں کی کمی آئے. اسکے علاوہ حادثات میں کمی، روڈز پر ٹریفک اور ماحولیاتی آلودگی میں کمی کی طرح بےشمار فوائد ہیں لیکن ہمارے ہاں کسی کی توجہ ہی نہیں.

ترکی میں اردگان استنبول میں 45 کلومیٹر نہر بناکر ترکی میں جہاں اربوں روپے کمانے کا سوچ رہا ہے وہاں بہت سے ممالک کا انحصار ترکی پر بڑھا رہا ہے. یہی کام پاکستان کرسکتا لیکن یہاں مسئلہ کسی اردگان کا نہ ہونا ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں