87

پانی کے تیز بہاؤ اور سر سبز پہاڑوں سے چین کے دیہی علاقوں میں ممکنہ معاشی فواہد

(خصوصی رپورٹ):۔ وسطی چین کے صوبے ہیبی کی بیفئنگ کاؤنٹی کے دیہی علاقے کے لوگ وانگ وینلی کے زرعی کاروبار کا آغاز کر رہے ہیں جب موسم گرما کے اوائل میں اپنے گھر کے قریب ایک خوبصورت سیاحتہی مقام جولیشن ماؤنٹین دیکھنے کے لیے سیاحوں کے ملک بھر سے جھنڈ کے جھنڈ آتے ہیں اور یہ اس علاقے میں سال بھر کے لیے سیر کا بہترین وقت ہے۔ سبزے کے لیے اناج کی حکمتِ عملی پت عمل درامد سے جولیشن ماؤنٹین کے سیاحتی اثاثے کی حفاظت کر کے ہیفنگ کاؤنٹی اپنے ماحولیاتی عوامل سے اپنی مقامی آبادی کے لیے بے پناہ اقتصادی فائدے کا سبب بن رہا ہے۔ اعدادوشمار کے مطابق 75.9فیصد اراضی جنگلات پر مشتمل ہے۔ جن میں چائے جڑی بوٹیوں کی ادویات، اور سیاحت کی صنعت سے پیدا ہونیوالی مجموعی آمدن تین ارب یوآن سے تجاوز کر چکی ہے۔ چین بیک وقت ملک میں ماحولیات کے تحفظ اور ملک میں غربت کے خاتمے کے حوالے سے جاری عوامل کو یقینی بنائے ہوئے ہے۔ مثال کے طور پر جنوبی مغربی چین کے صوبے یوننان میں چانکنگ کاؤنٹی میں چار ہزار ہیکٹر رقبے پر مشتمل جنگلا ت کو مقامی حکومت واپس جنگلات میں منتقل کرنے کے لیے پرعزم ہے، جس سے اس منصوبے کے تحت مقامی آبادی کے 7503دیہی گھرانوں کو معاشی فائدہ ہوگا، اس کے علاوہ ستاون ہزار ہیکٹر سے زائد رقبے پر عوامی جنگلات لگائے جانے کا منصوبہ تکیمل کے مراحل میں ہے جس سے مقامی حکومت کو 20.34ملین یوآن جنگلاتی ماحولیاتی معاوضہ ادا کیا جا سکے گا، اس کے علاوہ چین میں جینجنگ جیسی اور بھی بہت سیؤی جگہیں ہیں، جو غربت سے دوچار اور ماھولیاتی عوامل سے نبر آزما ہیں۔ حالیہ برسوں میں چین کی مقامی حکومتوں نے غریب شہریوں کے ساتھ ماحولیاتی منافع بانٹنے کے لیے ایک سازگار پالیسز پر مشتمل پیکج کا اعلان کیا ہے، ان نئی اناج برائے سبز پالیسز کے تحت ہر ایک0.006ہیکٹر رقبے پر کھیتوں کو جنگلات اور گھاس پر منتقل کرنے کے لیے کسانوں کو بالترتین 1200یوآن 850یوآن مل سکتے ہیں۔ 2016کے بعد سے چین نے وسطی اور مغربی 22سوبوں میں ماحولیاتی تحفظ کے حوالے سے بڑے منصوبے سر انجام دیئے یں اور ان منصوبوں پر مجموعی طور پر 150بلین یوآن کی لاگت آئیگی۔ تیز پانی اور سر سبز پہاڑ بہترین معاشی اثاثہ ہیں اور طویل عرصے سے غریب آبادیوں کے لیے آمدنی میں اضٖافے اور غربت میں کمی کے حوالے سے ان سے بھر پور فاہدہ اٹھایا جا سکتا ہے۔ اس حوالے سے ملک بھر میں مقامی حکومتیں مقامی حالات کے مطابق سبز صنعتوں کی ترقی کے لیے ایک کلیدی کرداراادا کر رہی ہیں۔ چین کے شمال جنوبی صوبے ہوبی میں واٹر ڈویژن پراجیکٹ ایک وسیع منصوبہ ہے، اور اس دانجیانگو تالاب کو بھرنے والے 12اہم ڈیمز میں سے دس شیان سے گزرتے ہیں اور دریائے یاینگسی کے بڑے معاون ندیاں دریائے ہان جیانگ اس سے ہی یہاں ہی ملتے ہیں، اس حوالے سے دریا کے کناروں کے ماحولیاتی عوامل کو بہتر بنانے اور دیہی سیاحت کو ترقی دینے کے حوالے سے اس گاؤں نے مناسب اقدامات کو یقنی بنا کر اس علاقے سے بڑی حد تک غربت کے خاتمے میں کمی یقینی بنائی ہے۔ دوسری جانب ماحولیاتی ماحول کی بہتری سے اہم اہداف بھی یقینی بنائیں گے ہیں جنکنگو کاؤنٹی چین کے جنوب مغربی چونگ میوننسپلیٹی کے کیانجن گاؤں کے کسان مرغیوں کو پالنے سے دو لاکھ یوں آن کا سالانہ منافع کمانے میں کامیاب ہو رہے ہیں۔ ژو نے کہا کہ میرا گاؤں منفی آکسیجن کے آئنز سے قدرتی طور پر مالا مال ہے اور ہم اپنیء مرغیوں کو قدرتی کیڑوں مکوڑوں اور قدرتی چشموں کے پانی سے پالتے ہیں اور یہ ہی وجہ ہے کہ ہمارے چکن کی مارکیٹ ویلیو بہت زیادہ ہے اور ہمارے علاقے کے چکن کی قیمت عام مارکیٹ کے چکن کی قیمت کے مقابلے میں تین گنا زیادہ ہے۔ اس گاؤں کے پہلے سیکرٹری سونگ کانگ نے بتاہا ہے کہ ماضی میں پہاڑوں میں چھپی ہوئی ابلیسی مرغیاں، کالے سور، اور سبزیاں ماضی کے برعکس اب خوراک کا جزو بن چکی ہیں سبز اور صحت مند مصنوعات نے انکی قیمتوں میں نمایاں اضافہ ریکاڑڈ کروایا ہے۔ اعدادوشمار کے مطابق وسطی اور مغربی چین کے صوبوں کی جنگلات کی پیداوار کی مالیت بائیس شعبوں میں چار ٹریلین یاآن سے تجاوز کر چکی ہے۔ اور ساڑھے سات ہزار سے زائد دہیات کو قومی جنگلات میں شامل کیا جا چکا ہے۔ اس طرح سے 11.1ملین رجسٹرڈ غریب افراد کو اپنی فیملی آمدن میں جنگلات پر بھروسہ کرتے ہوئے 35,000یوآن تک اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔ ماحولیاتی عوامل کے سبب چین سے تیس ملین لوگوں کو کامیابی سے انتہائی غربت کی سطع سے باہر نکال کر انکے میعارِ زندگی کو بہتر بنایا جا چکا ہے۔ اس طرح ستے غربت سے دوچار علاقوں میں جنگلات کے پھیلاؤ اور گھاس کے اگاؤ کے حوالے سے بیشتر عوامل کا آغاز کیا جا رہا ہے۔ اور انہی عوامل کے سبب صحرا اور مٹی کے کٹاؤ جیسے چیلنجز کو بھی کنٹرول کیا جا رہا ہے۔ اور اس طرح سے چین میں جنگلات میں اضافے کی شرح چوالیس فیصد تک بڑھ چکی ہے۔ تیزی پانی اور سر سبز پہاڑ بہترین اثاثے ہیں، نیشنل فوریسٹری اینڈ گراس لینڈ ایڈ منسٹریشن کے اڈائریکٹرژانگ جیانگ نے کہا ہے کہ تمام محکموں کو زیادہ سے زیادہ عزم اور طاقت کے ساتھ ماحولیاتی تحفظ اور غربت کے خاتمے میں ہم آہنگی پیدا کرنے کے لیے زیادہ متحرک کوششیں کرنا ہونگیں اور غربت کے خاتمے میں فیصلہ کن فتح حاصل کرنے کے لیے زیادہ سے زیادہ باہمی تعاون کو یقینی بنانا ہوگا۔
٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں